بیٹی کو تعلیم دلوانے کیلئےر وزانہ 12کلومیٹر کا سفر طےکرکے بیٹی کو سکول لے جانیوالا باہمت باپ

اسلام آباد(نیوز ڈیسک)میاں خان یوں تو اپنی زندگی میں تعلیم نہ حاصل کرسکا، تاہم یہ اپنے بچوں کو پڑھا لکھا دیکھنا چاہتے ہیں، جس کیلئے وہ روزانہ موٹر سائیکل پر 12 کلو میٹر کا سفر کرتے ہیں۔افغان صوبے پکتیکا سے تعلق رکھنے والے میاں خان ایک غریب آدمی ہے، تاہم ان کی آنکھوں میں بچوں کے مستقبل کیلئے کئی خواب ہیں۔ میاں خان اپنی چھوٹی بیٹی کو روزانہ 12 کلو میٹر کی مسافت طے کرکے نہ صرف اسکول چھوڑنے جاتے ہیں، بلکہ اسکول کے باہر ہی بیٹھ کر چھٹی ہونے کا انتظار بھی کرتے ہیں، تاکہ بیٹی کو بحفاظت اور آرام سے واپس گھر بھی لاسکے۔وہ 4 گھنٹے تک اسکول کے باہر ہی چھٹی ہونے کا انتظار کرتے ہیں، ان کی بیٹی کا کہنا ہے کہ وہ بڑے ہو کر ڈاکٹر بننا چاہتی ہے، کیوں کہ ہمارے علاقے میں کوئی خاتون ڈاکٹر

نہیں۔میاں خان کا مزید کہنا ہے کہ وہ اپنی بیٹیوں کو بھی بیٹوں جیسی تعلیم دلوانا چاہتا ہے۔ میاں خان کی چھوٹی بیٹی سوئڈیش حکومت کے تعاون سے قائم اسکول نورانیہ میں زیر تعلیم ہے۔ میاں خان کی جانب سے بیٹیوں کیلئے اس ہمت افزائی سے اندازہ لگایا جاسکتا ہے کہ گاؤں کہ لوگ تعلیم کیلئے کتنی دلچسپی رکھتے ہیں۔میاں خان کی 3 بیٹیاں ہیں، جو اسی اسکول میں چھٹی اور 5 ویں جماعت میں زیر تعلیم ہیں۔ ایک اندازے کے مطابق اس وقت اسکول میں 220 بچیاں چھٹی جماعت میں زیر تعلیم ہیں۔سوشل میڈیا پر صارفین کی جانب سے میاں خان کو زبردست الفاظ میں خراج تحسین پیش کیا گیا ہے۔ لوگوں کا کہنا ہے کہ میاں خان ہی اصل ہیرو ہیں۔ ایک صارف نے یہ بھی لکھا کہ سب ہیرو ٹوپی اور بوٹس نہیں پہنتے، کچھ ان چیزوں سے بالا تر ہوتے ہیں۔