کیپٹن (ر) صفدر کو گرفتار کرلیا گیا

لاہور (نیوز ڈیسک) اشتعال انگیز تقریر کرنے پر کیپٹن (ر) صفدر کو گرفتار کرلیا گیا۔تفصیلات کے مطابق کیپٹن (ر) صفدر کو اپنے سسر نواز شریف کی طبیعت خرابی کا سن کر کارکنوں کے ہمراہ اسلام آباد سے لاہور جارہے تھے کہ اس دوران انہیں گرفتار کرلیا گیا۔اطلاعات کے مطابق چند دن قبل نیب کورٹ میں مریم صفدر کی پیشی کے دوران انہوں نے ایک تقریر کی تھی جس پر ان کے خلاف شرانگیز تقریر کا مقدمہ درج کرلیا گیا تھا۔مقدمے کے بعد انہیں گرفتاری دینے کا کہا گیا تھا تاہم وہ پیش نہ ہوئے۔ آج جب وہ احتجاج کرنے نیب آفس جارہے تھے کہ انہیں راوی ٹول پلازا کے پاس پولیس نے گرفتار کرلیا۔اب انہیں عدالت میں

پیش کیا جائے گا جس کے بعد عدالت انہیں مزید حراست میں رکھنے یا ضمانت پر رہا کرنے کا حکم جاری کرے گی۔مسلم لیگ کی رہنما مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ صفدر کو گرفتار کرنا حکومت کی چھوٹی ذہنیت کو ظاہر کرتا ہے انہیں نواز شریف کے حق میں آواز بلند کرنے پر گرفتار کیا گیا، اگر شر انگیز تقریر پر گرفتار کرنا ہے تو عمران خان کو گرفتار کیا جائے جن کی تقاریر کی ویڈیوز موجود ہیں۔واضح رہے کہ 11 اکتوبر کو مبینہ طور پر ریاستی اداروں کے خلاف بات کرنے پر 2 روز بعد 13 اکتوبر کو پولیس نے کیپٹن (ر) صفدر کے خلاف مقدمہ درج کیا تھا۔اس حوالے ایف آئی آر میں کہا گیا تھا کہ ’کیپٹن (ر) صفدر نے حکومتِ پاکستان کے خلاف ہرزہ سرائی کی اور عوام کو اکسایا‘۔مقدمے کے متن کے مطابق ’ملزم نے امن و عامہ کو نقصان پہنچانے والی تقریر کرتے ہوئے عوام کو متنفر کر کے حکومت گرانے کی احتجاجی تحریک میں شامل ہونے کی ترغیب دی‘۔اس بارے میں ترجمان (ن) لیگ مریم اورنگزیب نے بتایا کہ ’محمد صفدر پر ’نفرت انگیز‘ تقریر کرنے اور کارکنوں کو اشتعال دلانے کا الزام ہے۔ترجمان مسلم لیگ (ن) نے ان کی گرفتاری کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کی ’فاشسٹ حکومت‘ اپوزیشن کی آواز دبانے کے لیے اوچھے ہتھکنڈوں پر اتر آئی ہے۔انہوں نے کہا کہ ’مسلسل نفرت انگیز تقاریر کرنے پر سب سے پہلے عمران خان کو گرفتار کیا جانا چاہیئے‘۔