’’اپوزیشن بتائے، استعفوں کا فیصلہ کیا، کب دیں گے‘‘حکومت نے اپوزیشن کو ان کے دعوے یاد دلاتے ہوئے کھری کھری سناڈالی

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان تحریک انصاف کے مرکزی رہنماء اور قانون دان بابراعوان نے کہا ہے کہ اپوزیشن بتائے، استعفوں کا فیصلہ کیا، کب دیں گے؟ اپوزیشن کی ساری دھمکیوں کا ایک ہی مقصد این آر او ہے، اپوزیشن رہنماء نے کہا کہ لات مار حکومت گرا دوں گا، نہیں گرا سکے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق وزیراعظم عمران خان سے سینئر قانون دان بابراعوان نے ملاقات کی۔جس میں سیاسی امور اور چیئرمین سینیٹ کیخلاف تحریک عدم اعتماد سمیت دیگر معاملات پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ ملاقات کے بعد بابر اعوان نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ایک سوال ”اپوزیشن چیئرمین سینیٹ کو ہٹانا چاہتی ہے؟‘‘ کے جواب میں کہا کہ لوگ خودکشی کے فیصلے بھی کرتے ہیں، انہیں روکا تو نہیں جاسکتا۔بابر اعوان نے کہا کہ اپوزیشن نے استعفے دینے کا فیصلہ کیا تھا،

کب استعفے دیں گے؟ اپوزیشن رہنماء نے کہا کہ لات مار حکومت گرا دوں گا ،گرا تو سکے نہیں؟انہوں نے کہا کہ اپوزیشن کی ساری دھمکیوں کا ایک ہی مقصد این آر او ہے۔مزید برآں وزیراعظم عمران خان سے خالد مقبول صدیقی کی سربراہی میں ایم کیوایم وفد نے ملاقات کی، جس میں وفد نے اپنے مطالبات کو دہرایا۔ ایم کیوایم وفد نے مطالبہ کیا کہ لاپتا افراد کی بازیابی اور منصوبوں کی تکمیل فوری کی جائے، ہمارے دفاترز کھولے جائیں اور سیاسی آزادی فراہم کی جائے۔ کراچی اور حیدرآباد کیلئے ترقیاتی پیکج ہنگامی بنیادوں پر جاری کیا جائے۔جس پر وزیراعظم عمران خان نے یقین دہانی کروائی کہ تحریری معاہدے پر من وعن عملدرآمد کیا جائے گا۔ انہوں نے ترقیاتی پیکج کی پہلی قسط فوری جاری کردی جائے گی۔ کراچی کی ترقی کیلئے فنڈز کی فراہمی کو یقینی بنائیں گے۔ وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ ایم کیوایم ہماری اہم اتحادی جماعت ہے، ایم کیوایم کو ساتھ لے کر چلیں گے۔