آرمی ایکٹ کا ترمیمی بل سینٹ میں بھی منظور

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) سینیٹ میں آرمی ایکٹ ترمیمی بل کثرت رائے سے منظور کر لیا گیا۔ تفصیلات کے مطابق آرمی ایکٹ ترمیمی بل سینیٹ نے منظور کر لیا ہے۔ آرمی ایکٹ میں ترمیمی بل کا مسودہ وزیردفاع پرویز خٹک نے سینیٹ میں پیش کیا۔ جس کے بعد تحریک انصاف کے رہنما و سینیٹر نے سوالوں کا وقفہ معطل کرنے کی تحریک پیش کردی ۔ جو کہ قائمہ کمیٹی کی جانب سے منظور کر لی گئی ۔ چیئرمین قائمہ کمیٹی برائے دفاع و سینیٹر ولید اقبال نے کمیٹی کو رپورٹ پیش کی۔ جس کے بعد پرویز خٹک کی جانب سے آرمی ایکٹ میں ترمیم کی تحاریک پیش کی گئی جس میں آرمی ایکٹٗ ایئرفورس ایکٹ اور پاکستان نیوزی آرڈیننس شامل تھے۔ جو کہ ایوان میں کثریت رائے سے منظور کر لی گئیں ۔واضح رہے گزشتہ روز آرمی ایکٹ میں ترامیم کا بل

قومی اسمبلی میں پیش کیا گیا تھا ۔پاکستان آرمی، نیوی اور ایئرفورس ترامیمی ایکٹ 2020 پر رائے شماری کے لیے قومی اسمبلی کا اہم اجلاس منعقد کیا گیا تھا۔ وزیراعظم عمران خان بھی اجلاس میں موجود تھے۔اجلاس میں آرمی ایکٹ 2020ء پیش کیا گیا تھا . وزیر دفاع نے آرمی ایکٹ ترمیمی بل 2020ء قومی اسمبلی میں پیش کیا۔آرمی ایکٹ کی ترمیمی بل کی شق وار منظوری کا عمل شروع کیا گیا۔آرمی ایکٹ ترمیمی بل ایوان میں پیش کرنے کی تحریک منظور کی گئی۔جس کے بعد آرمی ایکٹ ترمیمی بل 2020ء منظور کر لیا گیا ۔ بعدازاں بل کا مسودہ سینیٹ کی قائمہ کمیٹی کو بھیج دیا گیا تھا ۔ تاہم اب سینیٹ نےبھی آرمی ایکٹ میں ترمیمی بل کو کثریت رائے سے منظور کر لیا ہے۔ منظور کردہ بل میں آرمی ایکٹٗ ایئرفورس ایکٹ اور پاکستان نیوزی آرڈیننس شامل ہیں۔