موسم گرما میں کوروناوائرس ختم ہونے کادعویٰ، تحقیق کے بعد اصل حقائق سامنے آگئے

ریاض(نیوز ڈیسک) کورونا وائر س نے اس وقت پوری دنیا میں اپنا خوف پھیلا یا ہوا ہے جس کے بعد ہر طرف اس کی تباہی کا سلسلہ جاری ہے۔ اب تک دنیا بھر میں کورونا وائرس کی وجہ سے ہلاکتوں کی تعداد 21 ہزار سے تجاوز کرگئی ہے جبکہ 4 لاکھ 71 ہزار کے قریب لوگ ا س سے متاثر ہو چکے ہیں۔ عالمی ادارہ صحت کی جانب سے میڈیکل ایمرجنسی نافذ کر دی تھی تھی جس کے بعد ہر ملک کو احتیاطی تدابیر اپنانے کی ہدایت کی گئی تھی۔اسی دوران کچھ افواہیں سوشل میڈیا پر گردش کر رہی تھیں جن میں کہا جا رہا تھا کہ کورونا وائرس گرمی کے موسم میں اپنا اثر نہیں رکھتا۔ کہا جا رہا تھا کہ اگر گرمی کا درجہ حرارت

30 سینٹی گریڈ سے زیادہ ہو جائے تو یہ نقصان نہیں پہنچاتا۔ اسی سلسلے میں سعودی وزارت صحت کے ترجمان کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ ابھی تک کسی بھی تحقیق سے یہ بات ثابت نہیں ہوئی کہ کرونا وائرس 30 سینٹی گریڈ درجہ حرارت یا کسی بھی درجہ حرارت میں اپنا اثر کھو بیٹھتا ہے۔بات کرتے ہوئے ان کا مزید کہنا تھا کہ ہ کرونا وائرس دھات اور اس سے بنی اشیا پر زیادہ عرصے تک رہتا ہے، انہیں کسی بھی حالت میں چھونے سے گریز کیا جائے۔ان کا کہنا تھا کہ ہمیں اس طرح کی افواہیں پھیلانے سے گریز کرنا چاہیئے کیونکہ اس طرح لوگوں کو منفی پیغام پہنچایا جاتا ہے۔ ہمیں درست معلومات فراہم کرنی چاہیئے۔ کورونا وائرس دھات کی وجہ سے پھیلتا ہے اور ہمیںاس سے گریز کرنا چاہیئے۔انہوںنے عوام کے نام پیغام دیا ہے جس میں کہا ہے کہ انہوں نے مزید کہا کہ دھات کی کسی بھی چیز کو چھونے سے گریز کریں اور درجہ حرارت کے حوالے سے کہی جانے والی باتوں پر بھروسہ نہ کریں۔یاد رہے کہ اب تک دنیا بھر میں کورونا وائرس کی وجہ سے ہلاکتوں کی تعداد 21 ہزار سے تجاوز کرگئی ہے جبکہ 4 لاکھ 71 ہزار کے قریب لوگ ا س سے متاثر ہو چکے ہیں۔ عالمی ادارہ صحت کی جانب سے میڈیکل ایمرجنسی نافذ کر دی تھی تھی جس کے بعد ہر ملک کو احتیاطی تدابیر اپنانے کی ہدایت کی گئی تھی۔