کوروناوائرس سے متعلق 600 سال قبل کی گئی پیشگوئیاں سچ ثابت ہونے لگیں 

لاہور (نیوز ڈیسک) کورونا وائرس سے متعلق ماضی میں کی جانے والی پیش گوئیاں سچ ثابت ہونے لگیں ۔ تفصیلات کے مطابق تجزیہ کار مبشر لقمان کا کہنا ہے کہ نوسٹر اڈیمس اور بابا ونگا کی پیش گوئیاں سچ ثابت ہونے لگی ہیں جس سے اب عالمی جنگ کا خطرہ بھی لاحق ہو گیا ہے۔ مشہور فرانسیسی نجومی نوسٹر اڈیمس نے600 سال قبل ہی اس خطرناک وبا کے حوالے سے پیش گوئی کی۔نوسٹر اڈیمس کی 1566 میں انتقال کر گئے ۔تاہم اس سے قبل ہی کئی پیشن گوئیاں کی۔ نوسٹر اڈیمس نے نپولین کے عروج اور زوال ، لندن کی مشہور آگ کے حوالے سے پیشن گوئیاں کی تھی ۔ جو اب بلکل درست ثابت ہو رہی ہیں۔ نوسٹر اڈیمس نے 600 سال قبل ہی کورونا وائرس سے متعلق پیشن گوئی کی تھی ۔نوسٹر اڈیمس نے ” لے پروفسیز“ کتاب میں لکھا کہ 2016 میں امریکی صدر جھگڑالوں ہوگا ، جو ڈونلڈ ٹرمپ کی صورت میں سچ ثابت ہو ئی۔نوسٹر اڈیمس نے عالمی جنگ کی بھی

اسی سال پیشن گوئی کی۔اسی کتاب میں لکھا گیا کہ اٹلی اور فرانس میں ایک وبا آئے گی جو کہ تباہی مچا کر رکھ دے گی ، اور ساتھ ساتھ اردگرد کے ممالک کو بھی اپنی لپیٹ میں لے گی۔ ایک روش ستارہ نمودار ہوگا، موسم بتانے والا سسٹم خراب ہو جائے گا، معیشت تباہ ہو جا ئے گی۔ترقی یافتہ ملک تباہ ہو نگے۔جو کہ دجال کے اقتدار میں آنے کا باعث بنے گی۔1981میں آئی آف ڈارکنس ناول میں بھی کورونا کی پیشن گوئی کی گئی اور کہا گیا کہ ایک بیماری جنم لے گی جو پھپھڑوں اور حلق کی نالی کو متاثر کرے گی جس کا نام ووہان400 ہوگا۔ مبشر لقمان کا کہنا ہے کی امریکی مشہور کارٹون دی سمسنز میں بھی اس وائرس کو دیکھا گیا ہے جس طرح نائن الیون کو دیکھا گیا۔ 1993 میں انہیں کارٹونز نے ایک کورونا وائرس کے مرض کو دکھایا تھا ۔ تجزیہ کار نے مزید کہا کہ بابا ونگا نے بھی 1996 میں بابا ونگا نے پیش گوئی کہ ایک انفکشن ہم سب کو اپنی لپیٹ میں لے گا۔