دنیا کا وہ ملک جہاں حکومت نےعورتوںکو 6بچے پیدا کرنے کی ہدایت کردی گئی

کراکس(نیوز ڈیسک)وینزویلا کے صدر نکولس مدورو نے خواتین سے اپیل کی ہے کہ وہ ملک کی بہتری کے لیے چھ چھ بچے پیدا کریں۔میڈیارپورٹس کے مطابق خواتین سے متعلق نیشنل ہیلتھ کیئر پلان کے فروع کے لیے ایک ٹی وی پروگرام میں صدر نے عورتوں سے کہا کہ وہ بچے پیدا کرتی رہیں۔صدر مدورو نے کہا کہ خدا آپ پر رحمت عطا فرمائے کہ آپ چھ چھ ننھے منے لڑکے لڑکیوں کو پیدا کریں۔انہوں نے کہا کہ ہر عورت کو کم از کم چھ بچے پیدا کرنے چاہئیں۔ان کی اس درخواست اور دعا پر سوشل میڈیا پر بہت تنقید کی جا رہی ہے۔ صارفین کا کہنا ہے کہ اس وقت جبکہ ملک معاشی بحران سے گزر رہا ہے صدر خواتین کو زیادہ بچے پیدا کرنے کی تلقین کر رہے ہیں۔ان کا یہ بھی کہنا ہے کہ حکومت کو صحت کی پالیسیوں پر توجہ دینی چاہیے،

اس کے ساتھ ساتھ خواتین کو موزوں خوراک کی فراہمی بھی یقینی بنانے کی ضرورت ہے۔یاد رہے کہ یونیسف کے مطابق 2013 سے 2018 کے درمیانی پانچ سال میں تیرہ فیصد بچوں کو مناسب خوراک نہیں ملی تھی، اسی طرح ورلڈ فوڈ پروگرام کے مطابق ایک تہائی آبادی بنیادی خوراک کے حصول میں مشکلات کا شکار ہے۔وینزویلا کی ایک این جی او نے گزشتہ برس بتایا تھا کہ ملک میں نوزائیدہ بچوں کو ترک کر دینے کے رجحان میں ستر فیصد اضافہ ہوا ہے۔جنوبی امریکہ کے اس ملک میں سیاسی عدم استحکام کے باعث صورتحال خراب ہے۔ دنیا کے بہت سے ممالک نے حزب اختلاف کے رہنما جان گوائیڈو کو ملک کا رہنما تسلیم کر رکھا ہے لیکن زمینی حقائق یہ ہیں کہ صدر مدورو ابھی تک تخت اقتدار پر فائز ہیں۔ انہیں فوج کی حمایت بھی میسر ہے۔