درخت اگائو مہم کے تحت لگائے گئے پودوں کو کھانے پر پولیس نے دو بکریاں گرفتار کرلیں

بھارت (نیوزڈیسک)بھارتی ریاست تلنگانہ میں بھارتی پولیس نے پودے کھانے پر دو بکریوں کو حراست میں لے لیا۔ تفصیلات کے مطابق پولیس نے بتایا کہ تلنگانہ کے علاقہ حضورآباد میں ریاستی سطح پر درخت اُگاؤ مہم کے تحت لگائے جانے والے پودوں کو دونوں بکریاں نقصان پہنچا رہی تھیں۔ جس کے بعد مقامی این جی او سیو دی ٹریز سے تعلق رکھنے والے رضاکاروں انیل اور وکرانت نے پولیس میں ان بکریوں اور ان کے مالک کے خلاف شکایت درج کروائی۔ان دونوں رضاکاروں نے علاقے میں درخت اگاؤ مہم کے تحت پودے لگائے تھے، جن کو ان بکریوں نے نقصان پہنچایا۔ پولیس نے کہا کہ این جی او سے تعلق رکھنے والے

رضاکاروں نے اپنی شکایت میں کہا کہ انہوں نے علاقے میں مہم کے تحت 900 پودے لگائے تھے جن میں سے 250 پودے ان بکریوں نے کھالیے۔جس کے بعد پولیس نے ان دونوں بکریوں کو تحویل میں لے کر پولیس اسٹیشن کے باہر باندھ دیا۔یہی نہیں پولیس نے بکریوں کے مالک پر جُرمانہ بھی عائد کیا، مالک نے جُرمانہ ادا کیا جس کے بعد بکریوں کو مالک کے حوالے کر دیا گیا ۔ خیال رہے کہ بھارت میں پولیس کی اکثر ایسی ہی بھونڈی حرکتیں سامنے آتی رہتی ہیں۔ اس سے پہلے بھی بھارتی پولیس جاسوسی کے شُبے میں کبوتروں کو گرفتار کر چکی ہے۔ جموں میں بھارتی پولیس نے 154 کبوتروں کو جاسوسی کے شُبے میں پکڑ لیا تھا۔بھارتی میڈیا کی رپورٹ میں بتایا گیا تھا کہ کبوتروں کے پیروں میں الگ الگ رنگ کے گھنگھرو بندھے ہوئے تھے۔ اور یہ کبوتر امرتسر سے کشمیر میں بھیجے جا رہے تھے۔ ان کبوتروں پر جاسوسی کا شُبہ اس لیے بڑھ گیا تھا کیونکہ ان کبوتروں کو پھلوں کی پیٹی میں بند کر کے لے جایا جا رہا تھا ۔ بھارتی میڈیا نے دعویٰ کیا تھا کہ یہ تمام کبوتر ہمارے ملک کے کبوتروں سے کوئی مشابہت نہیں رکھتے۔